چند دنوں کے بعد اہل پاکستان کے دو بڑے تہوار آ رہے ہیں۔ ایک عید الاضحیٰ اور دوسرا یوم آزادی پاکستان، یعنی 14 اگست۔ دونوں تہوار اہل وطن بھرپور ملی و مذہبی جوش و خروش سے مناتے ہیں۔ ماضی پر نظر دوڑائی جائے تو پاکستان کے دشمنوں اور ان کے ایجنٹوں نے ہمیشہ خوشی کی گھڑیاں تخریب کاری کر کے غم اور سوگ میں بدلنے کی کوشش کی ہے۔ اس لیے اس ان دونوں تہواروں پر ہمیں خصوصی طور پر احتیاط کرنی چاہیے اور ملک اور عوام کی حفاظت میں اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ میں،آپ اور ہم سب مل کر دشمن کو ناکام بنا سکتے ہیں۔ اس کے لیے ان باتوں پر عمل کریں۔

سیکورٹی فورسز بالخصوص رینجرز اور پولیس کی جانب سے دی گئی ہدایات پر عمل کریں۔

کسی بھی مشکوک شخص، سامان، یا نقل و حرکت کی اطلاع فوری طور پر سیکیورٹی اداروں کو دیں۔

فوجی اداروں، عبادت گاہوں اور سرکاری عمارتوں کے ارد گرد خاص طور پر نظر رکھیں۔

اپنے اردگرد کے ماحول پر نظر رکھیں۔ محلے میں کوئی نئے کرائے دار اگر آئے ہیں تو ان کے بارے میں پڑوس والوں کو علم ہونا چاہیے۔

فوج، رینجرز اور پولیس کی جانب سے دیے گئے ایمرجنسی نمبر اپنے موبائل میں ضرور سیو کر لیں۔

گاو¿ں محلے میں موجود افراد کی سرگرمیوں سے باخبر رہیں۔ اگر کوئی کسی نوجوان کے کچے ذہن کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اسے کسی گمراہی کی جانب لے جا رہا ہے تو ایسے افراد کو دشمن کے آلہ کار بننے سے روکنا ضروری ہے۔

عوام اجتماعات جلسے جلوسوں کی سیکورٹی کا خصوصی اہتمام کریں۔

عوام کے ہجوم والی جگہوں پر سیکیورٹی گارڈز اور رضا کاروں کی روانہ کی بنیاد پر ڈیوٹیز لگائیں۔

نفرتیں ختم کریں اور ایک دوسرے کو قبول کریں۔ مسلکی اختلافات کو اس قدر طول نہ دیں کہ نوبت مخالف فرقے کو دائرہ اسلام سے خارج کرنے اور واجب القتل قرار دینے تک پہنچ جائے۔

عوامی سطح پر ان لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنی ہو گی جو تخریبی ذہنیت رکھتے ہیں۔ جو لوگوں میں نفرت کے بیج بوتے ہیں۔ جو پاکستان کی حکومت اور افواج کے خلاف ذہنوں میں زہر بھر رہے ہیں۔ یہ معاشرے کے علاوہ سوشل میڈیا پر کرنے کا بہت اہم کام ہے۔

روانہ صبح و شام کے اذکار کے علاوہ ملکی سلامتی اور کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے محفوظ رہنے کے لیے دعاوں کا اہتمام کریں۔ آخر میں میری جانب سے تمام اہل وطن کو عیدالاضحٰی اور یوم آزادی کی مبارک باد۔ اللہ تعالیٰ یہ دن ہمیں پر امن اور خوشیوں بھرے عطا فرمائے آمین

Facebook Comments