ماہرین نفسیات کے مطابق جو لوگ دن میں زیادہ تر وقت فیس بک، واٹس ایپ یا پھر کوئی اور سوشل میڈیا پورٹلز کا استعمال کرتے ہیں اُن کی نیند دیگر لوگوں کے مقابلے میں کم ہوجاتی ہے اور وہ بےخوابی کا شکار ہوجاتے ہیں۔ جتنا وقت سوتے ہیں وہ بھی بے سکون رہتے ہیں۔

تحقیق کے دوران 5 ہزار سے زائد مرد و خواتین سے انٹرویو کیا گیا جس میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ خصوصاً رات کے وقت سوشل میڈیا استعمال کرنے والے لوگوں کی نیند 7 گھنٹے سے کم رہ جاتی ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ ’’لڑکیوں کی  کثیر تعداد  خطرناک حد تک سوشل میڈیا کی جانب راغب ہورہی ہے جس کے باعث اُن کی نیند پوری نہیں ہوتی  اور پھر انہیں روز مرہ کے معمولات میں بہت سی پیچیدگیوں  کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ جبکہ ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ لڑکوں کی بھی بڑی تعداد سماجی رابطے کی ویب سائٹس کثرت سے استعمال کررہی ہے جس کے باعث اُن کی صحت پر برے نتائج مرتب ہورہے ہیں۔

تحقیق کرنے والی ٹیم کے سربراہ کا ماننا ہے کہ مطالعے کے نتائج موجودہ وقت میں نہایت اہمیت کے حامل ہیں کیونکہ دنیا بھر میں سوشل میڈیا کے صارفین کی تعداد میں بہت تیزی کے ساتھ اضافہ ہورہا ہے۔ ڈاکٹررابرٹ کہتے ہیں  کہ، ’’سوشل میڈیا صارفین نوجوان اور بچے بڑھتی عمر کے ساتھ بری عادات میں مبتلا ہوجاتے ہیں اور اُن کے لیے اس سے جان چھڑانا ناممکن ہوجاتا ہے‘‘۔

Facebook Comments